پرواز کے دوران جسم میں آنے والی حیران کن تبدیلیاں

طیاروں کے ذریعے سفر آج کل بہت عام ہے، خاص طور پر موسم گرما میں اکثر افراد سفر کے لیے اسے ترجیح دیتے ہیں۔

تاہم کیا آپ کو معلوم ہے کہ فضائی سفر انسانی جسم پر کس طرح کے اثرات مرتب کرسکتا ہے ؟

ویسے ضروری نہیں کہ ہر ایک کے ساتھ ایسا ہی ہو مگر اکثر افراد کے ساتھ ایسا ہوسکتا ہے جو درج ذیل ہے۔

ٹانگوں کا سوجنا

طیارے میں سفر کے دوران آزادی سے چلنے اور ٹانگیں پھیلانے کا موقع نہیں ملتا، بدقسمتی سے جسمانی طور پر ایک جگہ کافی دیر تک بیٹھے رہنا ٹانگوں میں دوران کون کو متاثر کرسکتا ہے جس سے وہ سوج جاتی ہیں جبکہ خون جمنے کا خطرہ بھی ہوتا ہے۔ اس سے بچنے کے لیے تھوڑی دیر بعد ٹانگوںکو پھیلانا مت بھولیں۔

منہ کے ذائقے میں تبدیلی

سائنسدانوں نے دریافت کیا ہے کہ دوران پرواز منہ کے ذائقے کا تعین کرنے والے دماغی حصے مختلف انداز سے کام کرنے لگتے ہیں۔ یعنی جن لوگوں کو زمین پر میٹھا زیادہ پسند ہوتا ہے وہ طیارے میں بیٹھ کر نمکین یا تیکھی چیز کی خواہش کرنے لگتے ہیں۔

منہ میں بو پیدا ہونا

جسم میں پانی کی کمی سے تھوک کمبنتا ہے جس کے نتیجے میں بیکٹریا کی نشوونما بڑھ جاتی ہے جس سے سانس میںبو پیدا ہوجاتی ہے۔ اس سے بچنے کے لیے پرواز سے قبل صحت بخش غذاکا استعمال کریں اور منٹ چیونگم کو چبائیں۔

جلدی مسائل

جسم میں پانی کی کمی کیل مہاسوں اور جلد لٹکنے کا باعث بھی بنتی ہے، طیارے میںخشک ہوا سے جلد کی تحفظ کی صلاحیت کمزور ہوتی ہے، جس سے جلدی مسائل کا امکان بڑھتا ہے۔

سر گھومنا

ہوسکتا ہے آپ کسی پرواز کے دوران سرچکرانے، دل متلانے یا قے کا تجربہ ہوا ہو، جس کی وجہ پرواز کے دوران جسم پر پڑنے والا تناﺅ یا دباﺅ ہوتا ہے۔ اس سے بچنے کے لیے کھڑکی کے ساتھ والی نشست پر بیٹھنا فائدہ مند ہوسکتا ہے۔

نظام ہاضمہ پر اثرات

جسمانی طور پر غیر متحرک رہناقبض کا باعث بن سکتا ہے۔ کئی گھنٹوں تک میٹابولزم کی رفتار میںکمی جبکہ جسمانی دباﺅ پیٹ کے اندر گیس کی گردش کو بدل دیتی ہیں۔

سننے میں مشکل

ہوا کے دباﺅ میں بدلاﺅ کانوںکو سن کرسکتا ہے، ایسا ہونے پر ہوسکتا ہے کہ عارضی پر سننے میں مشکل ہو اور تکلیف کا بھی سامنا ہو۔ چیونگم یا سخت ٹافی کو چبانا اس سے بچاﺅ میں مدد دے سکتا ہے۔

دانتوں میں درد

طیاروں میں سفر کرنے والے کئی افراد کو دوران پرواز دانت کے درد کا سامنا ہوتا ہے، جس کی وجہ ہوا کے دباﺅ میں تبدیلی ہوتی ہے جو کہ دانتوںکے اندرونی حصوں میں دباﺅ بڑھاتا ہے۔

زیادہ نروس

جو لوگ پرواز سے خوفزدہ نہ بھی ہو وہ بھی طیارے میں بہت زیادہ مشتعل ہوسکتے ہیں۔ اس کی وجہ بہت سادہ ہے یعنی ہمیں اپنے تحفظ پر کنٹرول نہیں رہتا جس سے ذہن بے چین ہوجاتا ہے۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s