جرمنی: خودکش حملے کی منصوبہ بندی، مشتبہ شامی نوجوان گرفتار

جرمن پولیس نے خودکش حملے کی منصوبہ بندی کرنے کے شُبے میں ایک سترہ سالہ شامی نوجوان کو گرفتار کر لیا ہے۔ حکام کے مطابق مبینہ ملزم دارالحکومت برلن میں حملہ کرنا چاہتا تھا اور اس حوالے سے اپنی والدہ کو آگاہ کر چکا تھا۔

Deutschland Symbolbild SEK (Getty Images/S. Steinbach)

پولیس کے مطابق مشتبہ حملہ آور کو جرمن چانسلر انگیلا میرکل کی ریاست برانڈنبرگ میں گرفتار کیا گیا ہے۔  ابتدائی اطلاعات کے مطابق شامی لڑکے نے اپنے منصوبے کے حوالے سے اپنی والدہ کو ایک پیغام بھی ارسال کیا تھا۔ جرمن سکیورٹی حکام ملک میں دہشت گردانہ حملوں کے امکان کے حوالے سے بارہا خبردار کر چکے ہیں۔

ریاستی وزیر داخلہ کارل ہائنس شروئٹر کا اس حوالے سے مزید معلومات فراہم کرتے ہوئے کہنا تھا کہ مشتبہ ملزم نے اپنی والدہ کو لکھا تھا، ’’میں نے جہاد میں شمولیت اختیار کر لی ہے۔‘‘ دوسری جانب پولیس کا کہنا ہے کہ وہ اس حوالے سے تحقیقات جاری رکھے ہوئے ہیں اور انہیں خودکش حملے کے حوالے سے ’’ٹھوس ثبوت‘‘ ابھی تک نہیں مل سکے ہیں۔

ریاستی وزیر داخلہ کے مطابق سترہ سالہ شامی لڑکا سن 2015 میں ایک مہاجر کے طور پر جرمنی پہنچا تھا اور اس وقت اس کے خاندان کا کوئی بھی فرد اس کے ہمراہ نہیں تھا۔ مشتبہ ملزم گزشتہ ایک برس سے اُوکرمارک نامی علاقے کے ایک مہاجر کیمپ میں رہائش پذیر تھا۔

جرمنی میں پہلے بھی متعدد دہشت گردانہ حملے ہو چکے ہیں۔ گزشتہ برس دسمبر میں ایک تیونسی باشندے نے برلن میں لگنے والی ایک کرسمس مارکیٹ پر ٹرک چڑھا دیا تھا، جس کے نتیجے میں بارہ افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے تھے۔

اسی طرح اپریل میں جرمن شہر کولون کی ایک عدالت نے ایک سولہ سالہ شامی مہاجر کو دہشت گردانہ حملے کی منصوبہ بندی کرنے کے الزام میں سزا سنائی تھی۔ رازداری کے قوانین کے تحت اس لڑکے کا نام بھی ظاہر نہیں کیا گیا تھا اور اسے دو سال تک نوجوانوں کی جیل میں رکھنے کے احکامات جاری کیے گئے تھے۔

 

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s