ٹرمپ نے ایف بی آئی کے سربراہ جیمز کومی کو برطرف کر دیا

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی کے سربراہ جیمز کومی کو ان کے عہدے سے غیر متوقع طور پر برطرف کر دیا ہے۔ کومی ٹرمپ کی انتخابی مہم کے روس کے ساتھ ممکنہ رابطوں کی چھان بین بھی کر رہے تھے۔

Washington Senat Aussage FBI Director James Comey (Reuters/K. Lamarque)جیمز کومی

امریکی دارالحکومت واشنگٹن سے بدھ دس مئی کو موصولہ نیوز ایجنسی ڈی پی اے کی رپورٹوں کے مطابق ریپبلکن صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے منگل نو مئی کی رات فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (FBI) کے سربراہ جیمز کومی کی برطرفی کا اچانک فیصلہ اس لیے بھی حیران کن ہے کہ کومی گزشتہ برس نومبر کے صدارتی الیکشن سے پہلے کے عرصے میں ٹرمپ کی انتخابی مہم کے اعلیٰ اہلکاروں کے روس کے ساتھ ممکنہ رابطوں کی تحقیقات بھی کر رہے تھے۔

USA Washington Trump Dekrete Religion (picture-alliance/dpa/Consolidated/R. Sachs)امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ

ٹرمپ انتظامیہ کی طرف سے جیمز کومی کی طربرفی کے اعلان کے ساتھ ان پر یہ الزام بھی لگایا گیا کہ ایف بی آئی کے سربراہ کے طور پر کومی ٹرمپ کی حریف صدارتی امیدوار اور سابقہ امریکی وزیر خارجہ ہلیری کلنٹن کی ای میلز سے متعلق اسکینڈل کے سلسلے میں ہونے والی چھان بین کے دوران کئی ’غلطیوں کے مرتکب‘ ہوئے تھے۔

اس اعلان کے بعد امریکی ڈیموکریٹس کی طرف سے فوری طور پر ٹرمپ انتظامیہ پر یہ الزام لگایا گیا کہ وہ ٹرمپ کی انتخابی مہم کے اعلیٰ عہدیداروں کے روس کے ساتھ مبینہ رابطوں کی تفتیش کے عمل میں سیاسی مداخلت کی مرتکب ہوئی ہے۔

اسی طرح ڈیموکریٹس کے ساتھ ساتھ خود ٹرمپ کی اپنی ریپبلکن پارٹی کے کئی رہنماؤں کی طرف سے بھی ایف بی آئی کے سربراہ کی اس طرح برطرفی پر عدم اطمینان اور ناپسندیدگی کا اظہار کیا گیا ہے۔

اس سلسلے میں وائٹ ہاؤس کے جاری کردہ ایک بیان میں منگل کی رات کہا گیا، ’’ایف بی آئی کے سربراہ جیمز کومی کو برطرف کرتے ہوئے ان کے عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے اور اس فیصلے کی وجہ امریکی اٹارنی جنرل جیف سیشنز اور نائب اٹارنی جنرل رَوڈ روزنشٹائن کی واضح شفارشات بنیں۔‘‘

Bildkombo Hillary Clinton und James Comey (picture-alliance/AP Photo)جیمز کومی اور سابق امریکی خاتون اول ہلیری کلنٹن

ڈی پی اے کے مطابق کومی کی برطرفی کے سلسلے میں صدر ٹرمپ کو بھیجی گئی اپنی سفارش کے ساتھ امریکی نائب اٹارنی جنرل روزنشٹائن نے اپنے خط میں کومی کی برطرفی کی تجویز کو اس دلیل کے ساتھ منطقی اور قابل فہم قرار دیا کہ ہلیری کلنٹن کی ای میلز کے معاملے کی تحقیقات کے سلسلے میں کومی کی وجہ سے قانون نافذ کرنے والے اس وفاقی امریکی ادارے کی ساکھ متاثر ہوئی ہے۔

جیمز کومی کو ٹرمپ کے پیش رو صدر باراک اوباما کے دور میں 2013ء میں دس سال کے عرصے کے لیے ایف بی آئی کا سربراہ مقرر کیا گیا تھا۔ وائٹ ہاؤس کے مطابق اس ادارے کے ایک نئے مستقل سربراہ کی تلاش شروع کر دی گئی ہے۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s