اظہر، مصباح کی شاندار بیٹنگ، پاکستان کی برتری

اظہر علی اور مصباح الحق کی ذمے دارانہ بیٹنگ کی بدولت پاکستان نے ویسٹ انڈیز کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میچ کی پہلی اننگز میں 81 رنز کی برتری حاصل کر لی جبکہ میزبان ٹیم نے دوسری اننگز میں ایک وکٹ پر 40 رنز بنا لیے ہیں۔

بارباڈوس میں کھیلے جا رہے سیریز کے دوسرے ٹیسٹ میچ میں پاکستان نے اپنی پہلی نامکمل اننگز دوبارہ شروع کی تو اظہر علی اور مصباح الحق وکٹ پر موجود تھے۔

دونوں کھلاڑیوں نے بیٹنگ کیلئے مشکل وکٹ پر محتاط انداز اختیار کرنے کی حکمت عملی اپنائی اور ابتدائی سیشن میں کوئی وکٹ نہ گرنے البتہ سلو رن ریٹ کے سبب پاکستان نے پہلے سیشن کے 26 اوورز میں صرف 54 رنز بنائے۔

کھانے کے وقفے کے بعد اظہر علی نے ٹیسٹ کرکت میں اپنی 13ویں سنچری اسکور کرنے کا کارنامہ انجام دیا لیکن سنچری کے فوراً بعد وہ دویندرا بشو کو وکٹ دے کر پویلین لوٹ گئے۔

دوسرے اینڈ سے مصباح الحق ذمے دارانہ بیٹنگ جاری رکھی اور اسد شفیق کے ساتھ 57 رنز کی شراکت قائم کی لیکن 99 کے انفرادی اسکور پر ان کے ویسٹ انڈین ہم منصب ہولڈر نے ان کی اننگز کا خاتمہ کر کے لگاتار دوسرے میچ میں سنچری سے محروم کردیا۔

5908e4263cc21

مصباح الحق کے آؤٹ ہونے کے بعد پاکستانی بیٹنگ لائن ڈگمگا گئی اور تمام کھلاڑی یکے بعد دیگرے غلط شاٹس پر وکٹیں گنوا کر پویلین لوٹتے رہے۔

سرفراز احمد اپنی اننگز کو زیادہ طول نہ دے سکے جبکہ اسد شفیق نے 60 گیندیں کھیلنے کے باوجود سیٹ ہونے کے بعد اپنی وکٹ گنوائی۔ پہلا میچ کھیلنے والے شاداب خان اور محمد عامر نے ٹیم کو 350 رنز کا ہندسہ پار کرایا لیکن دس رنز بنانے کے بعد محمد عامر کی ہمت بھی جواب دے گئی۔

کیریئر کا پہلا ٹیسٹ کھیلنے والے شاداب خان اور یاسر شاہ کے درمیان 30 رنز کی قیمتی شراکت ہوئی تاہم گیبرئیل نے 16 رنز بنا کر کھیلنے والے شاداب کو پویلین بھیج کر پاکستان کی نویں وکٹ گرادیں۔

یاسر شاہ، پاکستان کی جانب سے آؤٹ ہونے والے آخری بلے باز تھے جنھوں نے 24 رنز بنائے جبکہ محمد عباس ایک رن بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔

پاکستان کی پوری ٹیم پہلی اننگز میں 393 رنز بنا کر آؤٹ ہوئی جبکہ ویسٹ انڈیز کے خلاف 81 رنز کی برتری حاصل کرلی۔

ویسٹ انڈیز کی جانب سے شینن گیبرئیل کامیاب باؤلر رہے جنھوں نے سب سے زیادہ 4 وکٹیں حاصل کیں، کپتان جیسن ہولڈر اور بشو نے 3،3 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

مزید پڑھیں:سنچری اوپننگ شراکت، بارباڈوس ٹیسٹ پر پاکستان کی گرفت مضبوط
میزبان ٹیم نے 81 رنز کے خسارے کے بعد دوسری اننگز کا آغاز کیا تو پہلا نقصان محمد عباس کی باؤلنگ کے دوران اٹھانا پڑا جب کیرون پاؤل 6 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے جس کے بعد کرگی بریتھویٹ اور ہیٹمیئر نے تیسرے روز کوئی نقصان نہیں ہونے دیا۔

ویسٹ انڈیز نے تیسرے روز کے کھیل کے اختتام پر ایک وکٹ کھو کر 40 رنز بنائے تھے جبکہ انھیں پاکستان کی 81 رنز کی برتری کو ختم کرنے کے لیے مزید 41 رنز درکار ہیں۔

خیال رہے کہ ویسٹ انڈیز کی ٹیم پہلی انگز میں 312 رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہو گئی تھی۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s